وزیر خارجہ کا فسطائی نظریات روکنے کیلئے مل کر کام کرنے پر زور

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے شنگھائی تعاون تنظیم کے رکن ملکوں پر زور دیا ہے کہ خطے خصوصاً دنیا میں کسی بھی جگہ فسطائی نظریات اور پرتشدد قوم پرستی کے دوبارہ سر اٹھانے کو روکنے کیلئے مل کر کام کرنے کی ضرورت ہے۔

آج ماسکو میں تنظیم کے وزرائے خارجہ کونسل کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مقبوضہ علاقوں میں غیر قانونی قبضے کے تحت لوگوں کیخلاف ریاستی دہشت گردی کا ارتکاب کرنے والوں کی مذمت ہونی چاہئے اور انہیں انصاف کے کٹہرے میں لانا چاہیے۔

وزیر خارجہ نے زور دیا کہ دیرینہ تنازعات کا حل ترقی اقتصادی بڑھوتری غربت کے خاتمے اور لوگوں کی سماجی بہتری کے مقاصد کے حصول کیلئے شرط اول ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس پس منظر میں ہم اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردوں پر من و عن عملدرآمد کی اہمیت پر بھر پور زور دیتے ہیں۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ دنیا کو اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے متنازع علاقوں کی حیثیت تبدیل کرنے کے کسی بھی یکطرفہ اور غیر قانونی اقدامات کی شدید مذمت اور مخالفت کرنی چاہیے۔

افغانستان میں امن و استحکام کی اہمیت کو اجاگر کرتے ہوئے وزیر خارجہ نے کہا کہ پاکستان افغانوں کی اپنی قیادت میں امن اور مصالحتی عمل کیلئے کوششوں کی بھر پور حمایت کی ہے۔

مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ شنگھائی تعاون تنظیم کو علاقائی روابط کے منصوبوں کے فروغ پر توجہ دینی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ چین پاکستان اقتصادی راہداری کی منزل پاکستان خطے اور اس سے باہر کے ملکوں کیلئے اقتصادی خوشحالی لانا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں