برسلز: بھارت میں قید کشمیریوں سے یکجہتی کے لیے برسلز میں مظاہرہ کیا گیا

برسلز: بھارت میں قید کشمیریوں سے یکجہتی کے لیے برسلز میں مظاہرہ کیا گیا
برسلز (پ۔ر)
بھارت کی مختلف جیلوں میں قید کشمیری رہنماؤوں اور کارکنوں سے یکجہتی اور ان کی فوری رہائی کے لیے یورپی ہیڈکوارٹر برسلز میں ایک مظاہرہ کیا گیا۔
واضح رہے کہ بھارت کی مختلف جیلوں بشمول بدنام زمانہ تہاڑ جیل میں کرونا کی بڑھتی ہوئی وبا کی وجہ سے کشمیری قیدیوں کی زندگی کو خطرات لاحق ہوگئے ہیں۔
مظاہرے کا اہتمام کشمیرکونسل ای یو نے برسلز میں ڈبلیوایس سی کی عمارت کے سامنے جمعہ کے روز کیا۔ مظاہرین جو تمام ایس او پیز پر عمل درآمد کرتے ہوئے ماسک پہنے فاصلے پر کھڑے تھے، نے پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے۔ انہوں نے بھارتی جیلوں میں تمام کشمیری قیدیوں کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا جن میں اہم کشمیری رہنماء یاسین ملک، شبیرشاہ، مسرت عالم، اشرف صحرائی، آسیہ اندرابی، ایازاکبر اور فاروق ڈار بھی شامل ہیں۔
مظاہرے کے اختتام پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے کشمیرکونسل ای یو کے چیئرمین علی رضا سید نے کہاکہ کرونا وبا کی وجہ سے بھارتی جیلوں میں کشمیری قیدیوں کی زندگی کو درپیش خطرات بڑھ گئے ہیں لہذا ان کی جانوں کو بچانے کے لیے ان کی فوری رہائی ضروری ہے۔
ایک اور سینئر کشمیری رہنماء سردار صدیق نے بھی بھارتی جیلوں میں زیرحراست کشمیریوں کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا۔
مظاہرین نے عالمی برادری، یورپی یونین اور اقوام متحدہ سمیت تمام عالمی اداروں سے مطالبہ کیا کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں ظلم و ستم کو بند کروانے اور بھارتی جیلوں قید کشمیریوں کی فوری رہائی کے لیے اقدامات کریں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں