وطن نیوز انٹر نیشنل

شعیب اختر نے اپنی زندگی کے دو بڑے راز بتادیے

قومی کرکٹ ٹیم کے سابق مایہ ناز فاسٹ بولر شعیب اختر نے اپنی زندگی کے دو بڑے راز بتا دیے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق شعیب اختر نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ ہ وہ ٹیم انتظامیہ کی ہدایت کے خلاف بنجی جمپنگ کے لیے باہر گئے تھے کیونکہ وہ کمر کی انجری سے گزر رہے تھے۔

یہ واقعہ 2004 میں پاکستان کے دورہ نیوزی لینڈ کے دوران پیش آیا جب وہ گروئن انجری کا شکار تھے اور انہیں آرام کا مشورہ دیا گیا تھا۔

شعیب اختر نے انکشاف کیا کہ مجھے واضح طور پر ہدایت دی گئی تھی کہ ٹور کے دوران کوئی ایسا کام نہ کروں جس سے میرے کھیلنے کے امکانات کو نقصان پہنچے تاہم جیسے ہی سب لوگ آفیشل ڈنر کے لیے روانہ ہوئے، میں نے ایک ہیلی کاپٹر بک کیا اور بنجی جمپنگ کے لیے نکل گیا۔

شعیب اختر نے ایک اور واقعہ بتایا کہ جب انہوں نے گہرے سمندر میں 15-20 فٹ لمبی شارک کو کھانا کھلایا۔

Advertisement

انہوں نے کہا کہ درحقیقت، سالگرہ کے دوران دوست مجھے کہتے ہیں کہ ہم آپ کو آپ کی سالگرہ کے تحفے کے طور پر شارک کو کھلانے کے لیے لے جائیں گے لہذا، میں گہرے سمندر میں عظیم سفید شارک کو کھانا کھلا رہا تھا۔

شعیب اختر نے مزید کہا کہ میری ٹانگیں کانپ رہی تھیں، کیونکہ شارک 15-20 فٹ لمبی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

0