ہم چھ نومبر کے شہدائے جموں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہیں، علی رضا سید

برسلز(پ۔ر) کشمیرکونسل ای یوکے چیئرمین علی رضا سید نے چھ نومبرکے شہدائے جموں کو زبردست الفاظ میں خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ شہدا نے ہمیشہ تحریک آزادی جموں و کشمیر کو حوصلہ و ہمت بخشی ہے۔
انہوں نے اپنے ایک بیان میں اس بات کا اعادہ کیاکہ ان شہداء نے خون دے کرتحریک آزادی کشمیرکا آغازکیاتھا اور ہم انکا مشن جاری رکھیں گے۔یاد رہے کہ چھ نومبر1947ء کو قابض بھارتی اور مہاراجہ ہری سنگھ کی فورسز اور انتہا پسند ہندؤوں نے جموں سے پاکستان ہجرت کرنے والے کثیرتعداد میں کشمیریوں کو بے رحمی سے شہید کر دیا تھا۔ شہید ہونے والے ان کشمیری مسلمانوں میں معصوم بچے اور خواتین بھی شامل تھیں۔
چیئرمین کشمیرکونسل ای یو علی رضا سید نے کہاکہ چھ نومبر کے شہداء نے کشمیریوں کی تحریک آزادی میں بنیادی کردار اداکیاہے اور ان کی قربانیوں کو ہمیشہ یادرکھاجائے گا۔ شہداء کی قربانیاں رائیگان نہیں جائیں گے۔مقبوضہ کشمیرکی موجودہ صورتحال پر سخت تشویش ظاہرکرتے ہوئے چیئرمین کشمیرکونسل ای یو نے مزیدکہاکہ بھارتی کے زیر قبضہ جموں و کشمیرمیں آج بھی لوگ ظلم کی چکی میں پس رہے ہیں، ہمیں مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کے مسائل کو اجاگرکرنا ہوگا۔ عالمی برادری مقبوضہ کشمیرکی گھمبیرصورتحال کا فوری نوٹس لے۔ وادی کی صورتحال روزبروزخراب ہوتی جارہی ہے اور قابض حکام انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کے مرتکب ہورہے ہیں، خاص طور پر پچھلے سال پانچ اگست سے اب تک جب سے بھارتی حکومت نے جموں و کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرکے اس خطے کو غیرقانونی طور پر بھارت میں شامل کردیا ہے، کشمیریوں پر بھارتی مظالم میں اضافہ ہوا ہے۔
علی رضا سید نے کہاکہ بڑاافسوس ہے کہ مقبوضہ کشمیرمیں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں بڑی شدت سے جاری ہیں لیکن بھارت کو کوئی روکنے والانہیں۔ مقبوضہ وادی میں قتل عام، جنسی تجاوز، جبری گم شدگی، تشدد، لوگوں پرفورسزکی فائرنگ، اظہاررائے پر قدغن اور پرامن احتجاج پر پابندی روزانہ کا معمول بن چکاہے اور اب تو بھارتی حکام ملٹری لاک ڈاؤن اور کرونا وائرس کے بہانے لوگوں پر ظلم و ستم کررہے ہیں۔چیئرمین کشمیرکونسل ای یو نے اس بات کا اعادہ کیا کہ ہم عالمی برادری خصوصاً یورپین کو مقبوضہ کشمیرکی صورتحال کو آگاہ کرتے رہیں گے۔ ہمارا فرض ہے کہ دنیاکے سامنے بھارت کا اصل

اپنا تبصرہ بھیجیں